Author Topic: بطرزِ میر تقی میر  (Read 79 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline Muzaffar Ahmed Muzaffar

  • Administrator
  • Sukhan Fehm
  • *****
  • Posts: 1483
  • Karma: 79
بطرزِ میر تقی میر
« on: April 23, 2017, 03:23:19 PM »
۔غزل ۱
نزر میر تقی میر

کوئی محرومِ تمنا نہ رہا میرے بعد
رنگ لائی مری تاثیرِ دعا میرے بعد

آج عیسٰی کیطرح دار پہ کھینچے ہے مجھے
مجھ پہ روۓ گی یہ مخلوقِ خدا میرے بعد

میرے مٹنے سے ہوۓ گویا قفس سے آزاد
نہ رہا کوئی گرفتارِ بلا میرے بعد

ایسی روٹھی ہے مشّیت سے تری ربِ کریم
پھر چمن میں نہ گئی بادِ صبا میرے بعد

فاتحہ کیلۓ آیا تھا وہ ھمراہ رقیب !
خوب دی اس نے محبت کی سزا میرے بعد

صبح دم آتی ہے اس سوختہ سامانی میں
باغ سے نالۂ بلبل کی صدا میرے بعد

میری جانب سے کوئی جا کے کہے مجنوں سے
خاکِ صحراۓ تمنا نہ اُڑا میرے بعد

اُس نے احباب سے پوچھا ہے مرے گھر کا پتا
یاد آیا اسے پیمانِ وفا میرے بعد

وہ جو لکھا تھا کبھی خونِ جگر سے میں نے
مٹتا جاتا ہے وہی نقشِ وفا میرے بعد

تجھ پہ الزامِ محبت نہ لگا دے دنیا
آ کے تربت پہ یوں آنسو نہ بہا میرے بعد

رنج تو یہ ہے مظفر کہ وہ پیمان شکن
لب پہ لایا نہ کبھی حرفِ دعا میرے بعد

۷جنوری
۲۰۱۶

« Last Edit: April 24, 2017, 10:41:01 PM by Rehana.a »

Offline Rehana.a

  • Global Moderator
  • Sukhanwar
  • *****
  • Posts: 4815
  • Karma: 72
  • خدا وہ وقت نہ لائے کہ سوگوار ہو تو
Re: بطرزِ میر تقی میر
« Reply #1 on: April 24, 2017, 10:44:11 PM »
محترم مظفر بھائی
تسلیمات
غزل کی تعریف کرنا میرے بس کی بات نہیں ۔۔۔۔بساط بھر کوشش کی ہے تمثیل کے رنگ میں
گر قبول اُفتد زہے عز و شرف
ریحانہ احمد

Offline Muzaffar Ahmed Muzaffar

  • Administrator
  • Sukhan Fehm
  • *****
  • Posts: 1483
  • Karma: 79
Re: بطرزِ میر تقی میر
« Reply #2 on: April 29, 2017, 11:14:21 AM »
محترمہ ریحانہ احمد جاناں صاحبہ آداب و تسلیمات

مزاقِ اقدس

جس خلوص و ارادتِ خاص سے آپنے میری معمولی سی غزل کو سجاکر پیش کیا ہےلاریب قابلِ صد تحسین ہے میری دلی دعا ہے کہ اللہ رب العزت آپ کو ہمیشہ سلامت رکھے اور اور دین و دینا میں سرخرو فرماۓ آمین ثمہ آمین

حاشیہ غزل کے تیسرے مصرعہ میں : دار: ٹائپو سے (در) لکھ دیا گیا ہے دیکھ لیجۓ  گا

خیر اندیش
مظفر احمد مظفر
« Last Edit: April 29, 2017, 11:17:47 AM by Muzaffar Ahmed Muzaffar »